اداریہ (شگوفہ – ستمبر 2010ء)

شگوفہ کے اڈیٹر اوورسیز ڈاکٹر عابد معز سعودی عرب کے شہر ریاض میں تقریبا 22 سال قیام کے بعد حیدآباد واپس آچکے ہیں ۔ ریاض میں ان کے اعزاز میں متعدد جلسے منعقد ہوئے ۔ یوں تو آئے دن سعودی مملکت سے اپنے وطن واپس ہونے والے تارکینِ وطن کے لیے وداعی جلسے منعقد ہوتے رہتے ہیں ۔

مراسلے (شگوفہ – ستمبر 2010ء)

لئیق انصاری ، نرمل
شگوفہ جون اور جولائی کے مطالعہ کے بعد بے حد خوشی ہوئی کہ آپ نے ابتدائی دور کے قلمی رفیقوں اور قلم کاروں کو یاد رکھا اور اور ان کے کارناموں سے اب قارئین کو واقف کروا رہے ہیں ۔

ڈاکٹر محمد سرور ، حیدرآباد
مکرمی ، تسلیمات۔
امید ہے مزاج بخیر ہوں گے۔ ساہتیہ اکیڈمی کے پروگرام میں آپ سے مختصر ملاقات رہی۔

اسرار جامعی : قطعات

یوم آزادی و یومِ جمہوریہ
پوچھا اگر ہے آپ نے سن لیں جناب من
اسرار اب کہے گا ہی باتیں کھری کھری
چھبیس جنوری ہو کہ پندرہ اگست ہو
وہ کیا کرے جو ڈھونڈتا پھرتا ہے نوکری

باپو
باپو جی نے ہم کو یہ آزاد بھارت دے دیا
کیا دیا ہم نے انہیں یہ بات سب نے گول کی
ایک گز کی دی لنگوٹی ایک پیالہ دودھ کا
اور کھلا دیں تین اصلی گولیاں پستول کی

ایک شعر
شاعروں کے ایک اچھے شعر کی
ان کے منہ پر گر کریں تعریف تو
پھر انہیں کے دس برے اشعار بھی
جبریہ سننے پڑیں گے آپ کو

بور
بور کرنا ہو کسی شاعر کو تو
جامعی کا مشورہ یہ مان لیں
اس کے منہ پر دوسروں کے شعر کی
جس قدر تعریف ممکن ہو کریں

سن
شاعری سن سن کے سب
ہنس کے یہ کہنے لگے
شعر سن سن کر ترے
کان میرے سن ہوئے